غم سبھی راحت و تسکین میں ڈھل جاتے ہیں

غم سبھی راحت و تسکین میں ڈھل جاتے ہیں
جب کرم ہوتا ہے حالات بدل جاتے ہیں
ان کی رحمت ہے خطا پوش گنہ گاروں کی
کھوٹے سکے سرِ بازار بھی چل جاتے ہیں
اسمِ احمدﷺ کا وظیفہ ہے ہر اک غم کا علاج
لاکھ خطرے ہوں اسی نام سے ٹل جاتے ہیں
آپ ﷺ کے ذکر سے اک کیف ملا کرتا ہے
اور جتنے بھی ہیں اسرار وہ کھل جاتے ہیں
اپنی آغوش میں لے لیتا ہے جب ان کا کرم
زندگی کے سبھی انداز بدل جاتے ہیں
عشق کی آنچ سے دل کیوں نہ بنے گا کعبہ
عشق کی آنچ سے پتھر بھی پگھل جاتے ہیں
رکھ ہی لیتے ہیں بھرم ان کے کرم کے صدقے
جب کسی بات پہ دیوانے مچل جاتے ہیں
دم نکل جائے تیری یاد میں پھر ہم بھی کہیں
لللّٰہ الحمد لئے حُسنِ عمل جاتے ہیں
آپڑے ہیں ترے قدموں میں یہ سن کر ہم بھی
جو ترے قدموں پہ گرتے ہیں سنبھل جاتے ہیں
اُمتِ احمدِ مختارﷺ نہیں ہو سکتے
اور ہیں اور جہنم میں جو جل جاتے ہیں
مطمئن ہوں گے مگر دیکھ کے جلوہ ان کا
ہم نہیں وہ جو کھلونوں سے بہل جاتے ہیں
یاد اُن کی بدل اُن کا نہیں ہونے پاتی
ہجر کے شام و سحر پیار میں کھل جاتے ہیں
کوئی دیکھے تو سہی ان کی دہائی دے کر
عشق صادق ہو تو پتھر بھی پگل جاتے ہیں
کیف افصل ہیں وہی قطرے جہاں میں خالد
ساگر اے نعت سے قطرے جو اچھل جاتے ہیں
آپﷺ کو کعبہ مقصود ہی مانو خالدؔ
آپﷺ کے در پہ سب ارمان نکل جاتے ہیں

Gham Sabhi Rahat O Taskeen Mein Dhal Jaate Hain
Jab Karam Hota Hai Haalat Badal Jaate Hain
Unki Rehmat Hai Khatakosh Gunah gaaron Ki
Khote Sikke Sare Bazaar Bhi Chal Jate Hai
Isme Rehmat Ka Wazifa Hai Har Ek Gham Ka Elaaj
Laakh Khatre Ho isi Naam Se Tal Jaate Hai
Aap ke zikar se ak qaif mila kerta hai
Or jitnay bhi hain israr wo khul jatay hain
Apni Aagosh Mein Le Leta Hai Jab Unka Karam
Zindagi Ke Sabhi Andaaz Badal Jaarte Hai
ishq ki aanch se dil kiun na banay ga kaaba
ishq ki aanch se pathar bhi pighal jatay hain
Rakh Hi Lete Hain Bharam Unke Karam Ke Sadqe
Jab Kisi Baat Pe Deewane Machal Jaate Hain
Dum nikal jaye teri yaad main phir hum bhi kahain
allah alhamd liye husne amal jaate hain
Aa Pade Hain Tere Qadmo Mein Hum Bhi Ye Sun Kar
Jo Tere Qadmon Pe Girte Hai Sambhal Jaate Hain
ummate ahmade mukhtar nahin ho saktay
or hain aur jahanum main jo gir jatay hain
mutmain hon gay magar daikh ke jalwah un ka
hum nahin wo jo khilonon se behal jatay hain
yaad an ki badl an ka nahin honay paati
hijar ke shaam o sahar piyar main khul jaatay hain
Koi Dekhe To Zara Unki Duhaai De Kar
Ishq Sadik Ho To Pathar Bhi Pighal Jaate Hain
Kaif Afzal Hai Wohi Qatr-e-Jahan Mein Khalid
Sagar e Naat se Qatre Jo Uchchal Jaate Hai
Aap ko Kaabaye Maqsood Hi Maanu Khalid
Apke Dar Pe Sab Armaan Nikal Jaate Hain