وہ کیسا سماں ہو گا وہ کیسی گھڑی ہو گی

وہ کیسا سماں ہو گا وہ کیسی گھڑی ہو گی
جب پہلی نظر انؐ کے روضےپر پڑی ہو گی
یہ کوچہ جاناںؐ ہے آہستہ قدم رکھنا
ہر جا پہ ملائک کی بارات کھڑی ہو گی
کیا سامنے جا کے ہم حال اپنا سنائیں گے
سرکار ؐ کا در ہو گا اشکوں کی جھڑی ہو گی
کچھ ہاتھ نہ آئے گاآقا ؐ سے جدا رہ کر
سرکار ؐ کی نسبت سے توقیر بڑی ہو گی
وہ شیشہ دل غم سے میلا نہ کبھی ہو گا
تصویر مدینے کی جس دل میں جڑی ہو گی
ہو جائے جو وابستہ سرکار ؐ کے قدموں سے
ہر چیز زمانے کی قدموں میں پڑی ہو گی
چارہ نہ کوئی کرنا اک نعت سنا دینا
ناچیز ظہوری کی جب سانس اڑی ہو گی

woh kaisa samaa ho ga woh kaisi ghari ho gi
jab pehli nazar un ke roze par pari ho gi
yeh koocha janan hai aahista qadam rakhna
har ja pay malaik ki baarat khari ho gi
kya samnay ja ke hum haal apna sunaein ge
sarkar ka dar ho ga ashkon ki jharri ho gi
kuch haath nah aaye ga aaqa se judda reh kar
sarkar ki nisbat se touqeer barri ho gi
woh sheesha dil gham se mela nah kabhi ho ga
tasweer madeeney ki jis dil mein jari ho gi
ho jaye jo wabasta sarkar? ke qadmon se
har cheez zamane ki qadmon mein pari ho gi
charah nah koi karna ik naat suna dena
nacheez Zahoori ki jab saans udi ho gi